شوبز


’’بھارتی فلم انڈسٹری ریپ کا کارخانہ بن گئی‘‘

ممبئی(این این آئی ) بھارتی ملیالم فلم انڈسٹری کے نامور ہدایت کار چلاپاٹھی راؤ اور اداکار سروجن لوکیش نے تیلگو اداکارہ کو چلتی گاڑی میں زیادتی کا نشانہ بنانے کی کوشش کی تاہم اداکارہ اپنی جان بچانے میں کامیاب ہوکر فرار ہوگئی۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق ملیالم فلم انڈسٹری کی نامور اداکارہ (جن کی شناخت ظاہر نہیں کی گئی ہے) نے ہدایت کار چلاپاٹھی اور ساتھی اداکار

سروجن کے خلاف چلتی گاڑی میں زیادتی کا نشانہ بنانے کی کوشش کے خلاف مقدمہ درج کروایا ہے۔اداکارہ کا موقف ہے کہ وہ لوگ شوٹنگ کی غرض سے بھارتی ریاست آندھرا پردیش کے ضلع مغربی گوداوری جارہے تھے کہ گاڑی میں ان کے ساتھ موجود ہدایت کار اور اداکار نے انہیں نامناسب طریقے سے چھونے کی کوشش کی تاہم اداکارہ کی جانب سے مزاحمت کیے جانے پر کار سامنے سے آنے والی تیز رفتار گاڑی سے ٹکراگئی جس کے باعث اداکارہ وہاں سے بھاگنے میں کامیاب ہوگئی۔پولیس نے متاثرہ اداکارہ کی مدعیت میں مقدمہ درج کرکے تحقیقات کا آغاز کردیا ہے۔واضح رہے کہ بھارت میں خواتین کے ساتھ جنسی زیادتی یا زیادتی کی کوششوں جیسے واقعات میں روز بروز اضافہ ہوتا جا رہا ہے، یہاں تک کہ عام خواتین کے ساتھ بالی ووڈ جیسی طاقتور انڈسٹری سے تعلق رکھنے والی اداکارائیں بھی محفوظ نہیں ہیں ، حالیہ برسوں میں فلم انڈسٹری سے تعلق رکھنے والی متعدد اداکاراؤں کے ساتھ ہدایت کار و پروڈیوسرز کی جانب سے زیادتی کا نشانہ بنائے جانے کے کئی واقعات منظر عام پر آئے ہیں اس سے قبل معروف بھارتی اداکار انیل کپور کی بیٹی اور معروف ہیروئن سونم کپور بھی بچپن میں جنسی زیادتی کا نشانہ بننے بارے اعتراف کر چکی ہیں جبکہ دیگر اداکارائوں کی جانب سے نہ صرف بچپن بلکہ فلم انڈسٹری میں روا رکھے جانے والے روئیے بارے کئی مرتبہ بیانات سامنے آچکے ہیں۔ جس سے بھارت کا مکروہ چہرہ کھل کر سب کے سامنے آیا ہے۔

اوپر